Punjabi a foul language? پنجابی زبان اور انگریزی میڈیم اسکول 

“بیٹا جی پنجابی زبان بڑوں کا ادب سکھاتی ہے. اب دیکھو انگریزی میں کسی کو پکارنا ہو تو یو کہتے ہیں جبکہ پنجابی میں بولو تو بڑوں کے لیے تسیں اور چھوٹوں کیلئے توں بولتے ہیں”. اللہ بخشے مرحوم تایا جان کو جو اکثر ایسی مثالیں دے کے ہم بچوں کو لاجواب کر دیا کرتے تھے. 

میرے ابا جان کا خاندان تقسیم کے بعد ہندوستان کے پنجاب سے پاکستانی پنجاب میں رہائش پذیر رہا. کچھ عرصے بعد دادا جان سندھ میں آبسے اور ہم نے جب سے آنکھ کھولی تو اپنے خاندان کو کراچی میں ہی پایا. امی کا تعلق پنجاب سے ہے تو مادری زبان پنجابی ٹھہری. کراچی میں پلے بڑھے اس طرح کہ اسکول میں سیکھی اردو اور انگریزی جبکہ گھر میں عموماً پنجابی ہی بولی اور سنی. سندھ میں رہنے کے باعث ابو کو سندھی زبان پر عبور حاصل تھا لہذاسندھی بھی کچھ سمجھ آتی ہے. بنیادی طور پر میرے لاشعور میں زبانوں کی فہرست جاری رہی. 

آجکل سوشل میڈیا پر ایک نجی اسکول کا نوٹس متنازعہ بنا ہوا ہے جسمیں اسکول نے لکھا ہے کے اسکول کے اندر اور باہر خراب زبان استعمال کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی. کوئی مظائقہ نہیں کے ایک اسکول بچوں کی تعلیم کے ساتھ تربیت بھی کرے مگر بات تب بگڑی جب اسی مراسلے میں اسکول کی طرف سے خراب یا گندی زبان کی وضاحت پنجابی زبان کہہ کی گئی. 

کیا اسکا مطلب یہ سمجھا جائے کے انگریزی اسکول میں بچے اگر انگریزی زبان کا استعمال کریں چاہے وہ گالیاں دینے کے لیے ہو تو وہ قابل قبول ہے؟  ہرگز نہیں. یقینی طور پر اسکول کا یہ مطلب نہیں ہوگا لیکن کیونکہ اسکول پنجاب کے شہر ساہیوال میں ہے اسلیے یہ کچھ متعصبانہ نوٹس لگا. 

چاہیے تو یہ تھا کہ انتظامیہ اس معاملے پر سوشل میڈیا میں ہونے والے بحث کو کاتب کی غلطی قرار دے کر مزید ہوا نہ دیتی مگر اسکول انتظامیہ نے اسکے برعکس ایک نہایت غیرمناسب بیان جاری کیا. مجھے افسوس ہے کے  طبقاتی تقسیم اور تعصب کو اس طرزِ عمل سے فروغ حاصل ہوگا جسے بہرحال ہمیں سراہنا نہیں چاہئیے.

 میرا ننھیال ساہیوال میں آباد ہے اور اتفاقاً گزشتہ ہفتے ہی وہاں سے واپس آئی ہوں. تعلیم کا معیار ہمیشہ سے بہترین رہا ہے. گورنمنٹ کمپریہنسو اسکول ساہیوال سے پڑھے ہوئے کزنز کی اولادیں اب وہاں کے نجی تعلیمی اداروں میں پڑھنے جاتی ہیں ماشاءاللہ سے. 

امید ہے کے نئی نسل پنجابی زبان کو ان اداروں میں پڑھ کر بھی فخر سے اپنائے مگر اس کیلئے انگریزی اسکولوں کو بھی اپنا رویہ مقامی زبانوں کیلئے بہتر کرنا ہوگا. 

انگریزی بلاگ پر اردو میں یہ پوسٹ لکھنے کی وجہ سمجھ گئے آپ؟ 

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s